151

پرائم منسٹر عمران خان کا یونائیٹڈ نیشن میں تاریخی خطاب، عالم کفر کے بخیے ادھیڑ دیے—-

پرائم منسٹر عمران خان کا یونائیٹڈ نیشن میں تاریخی خطاب، عالم کفر کے بخیے ادھیڑ دیے—-

ملتان-(اردو- نیوز- ٹائم ) عمران خان نے کل یونائیٹڈ نیشن میں اپنی تقریر سے ساری عالم کفر کو ادھیڑ کر رکھ دیا -عمران خان نے اپنے خطب کے ذریے دنیا کو بھارت کا چہرہ دکھایا-

اُنہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت نےسلامتی کونسل کی ١١ قراردادوں کی خلاف خلاف ورزی کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیرکو خصوصی حیثیت دینے والے آرٹیکل ٣٧٠ ختم کیا ، جس کے بعد سے مقبوضہ وادی میں ٨٠ لاکھ کشمیری ٩ لاکھ بھارتی فوجیوں کی گرفت میں ہیں اور اُن کے ظلم و ستم برداشت کر رہے ہیں۔

اس بات کے دوران کیمرہ مین نے بھارت کے پینل میں موجود خواتین دکھائیں۔ عمران خان کے اِس خطاب کے بعد اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں موجود بھارت کی نمائندگی کرنے والی خواتین ہکا بکا ہوکر رہ گئیں اور وہ کیمرہ کی آنکھ سے نہ بچ سکیں۔

جنرل اسمبلی میں موجود کیمرہ مین نے بھی عمران خان کے خطاب کے ایک ایک جملے پر بھارتی نمائندوں کے چہرے کے تاثرات دِکھائے ۔ وزیراعظم عمران خان نے خبردار کیا کہ اگر عالمی برادری نے مداخلت نہیں کی تو دو جوہری ملک آمنے سامنے ہوں گے، اس صورتحال میں اقوام متحدہ پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے، اگر پاکستان اور بھارت میں روایتی جنگ ہوتی ہے تو کچھ بھی ہوسکتاہے۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے ٧٤ ویں اجلاس سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے ٤ اہم نکات پر اظہار خیال کیا۔

انہوں نے کہاکہ اگر روایتی جنگ ہوئی تو کچھ بھی ہوسکتا ہے، پاکستان کے پاس خود سے ٧ گنا بڑے ملک کے خلاف آخر تک لڑنے کے سوا کوئی چوائس نہیں ہوگی اور ایٹم بم چلا تو نتائج سرحدوں سے پار تک جائیں گے۔

عمران خان نے واضح تو پر کہا کہ میں دنیا کو ڈرانے نہیں آیا ،بلکہ سنجیدہ توجہ دلارہا ہوں کہ اس معاملے کی حساسیت کو سمجھا جائے،اس صورتحال میں ذمہ داری اقوام متحدہ پر عائد ہوتی ہے،یہی کہنے کےلئے یہاں آیا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے سلامتی کونسل کی ١١ قراردادوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کی، مقبوضہ وادی میں اضافی فوجی نفری تعینات کی اور کرفیو لگاکر ٨٠ لاکھ لوگوں کو گھروں میں محصور کردیا۔

وزیراعظم نے جنرل اسمبلی کے اجلاس میں بھارتی وزیر اعظم سے متعلق کہا کہ مودی آر ایس ایس کے رکن ہیں جو ہٹلر اور مسولینی کی پیروکار تنظیم ہے، آر ایس ایس کے نفرت انگیز نظریے کی وجہ سے گاندھی کا قتل ہوا، آر ایس ایس بھارت میں مسلمانوں کے خلاف نفرت پیدا کررہی ہے اور یہ ہٹلر سے متاثر ہو کر بنی، آر ایس ایس بھارت سے مسلمانوں اور عیسائیوں سے نسل پرستی کی بنیاد پر قائم ہوئی، اسی نظریے کے تحت مودی نے گجرات میں مسلمانوں کا قتل عام کیا۔

وزیراعظم نے اپنے خطاب میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم بے نقاب کرتے ہوئے کہاکہ تقریبا ً ٢ ماہ سے کرفیو نافذ ہے،جس کے اٹھتے ہی بھارت خونریزی کرے گا۔

انہوں نے کہاکہ جس طرح آج ٨٠ لاکھ کشمیری مسلمان محصور ہیں ،اس طرح صرف ٨ لاکھ یہودی قید ہوتے تو کیا اقوام عالم یوں ہی خاموش رہتا-

عمران خان نے کہاکہ بھارتی ظلم و تشدد سے انتہا پسندی میں اضافہ ہورہا ہے،اس نے لوگوں کو ہتھیار اٹھانے پر مجبور کردیا ہے- پلوامہ حملے میں ملوث کشمیری نوجوان بھی بھارتی تشدد کا شکار بنا تھا۔

ان کا کہنا تھاکہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت نے اقوام متحدہ کی ١١ قراردادوں کی خلاف ورزی کی، گزشتہ سالوں میں ١ لاکھ کشمیریوں نے جان کی قربانی دی، مودی کی انا اور تکبر نے اسے اندھا کردیا ہے- افسوس ہے کہ دنیا انسانیت کے بجائے اپنا کاروباری مفاد دیکھ رہی ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے اسلامو فوبیاں پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ نائن الیون کے بعد سے اسلامو فوبیا میں خطر ناک حد تک اضافہ ہوا ہے،بعض ملکوں میں مسلم خواتین کا حجاب پہننا مشکل بنادیا گیا ہے ۔

انہوں نے کہاکہ بنیاد پرست اسلام یادہشت گرد اسلام کچھ نہیں ہوتا ،اسلام صرف ایک ہے جو حضور محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمیں سکھایا ہے،مغرب کو سمجھناہوگا کہ مسلمان اپنے نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے کتنی محبت کرتے ہیں،مغرب میں کچھ لوگ جان بوجھ کر مسلمانوں کو تکلیف دینے کے نفرت انگیز بات کرتے ہیں۔

وزیراعظم نے مزید کہاکہ کوئی مذہب بنیاد پرستی نہیں سکھاتا،افسوس کی بات ہے بعض سربراہان اسلامی دہشت گردی اور بنیاد پرستی کے الفاظ استعمال کرتے ہیں،افسوس کی بات ہے مسلم ملکوں کے سربراہوں نے اس بارے میں توجہ نہیں دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں