161

کورونا وائرس کے پھیلاوٴ سے متعلق خطرے کی گھنٹی

نیویارک میں اپریل مارچ سے اور مئی اپریل سے زیادہ خطرناک ہوگا، دوٹوک بتانا چاہتا ہوں کہ صورتحال بہت خراب ہوگی، وینٹی لیٹرز کی قلت پیدا ہوجائے گی۔ میئر نیویارک بل ڈی بلیسیو کا بیان

میئر نیویارک بل ڈی بلیسیو نے کورونا وائرس کے پھیلاوٴ سے متعلق خطرے کی گھنٹی بجا دی۔ انہوں نے کہا کہ نیویارک میں اپریل مارچ سے اور مئی اپریل سے زیادہ خطرناک ہوگا، دوٹوک بتانا چاہتا ہوں کہ صورتحال بہت خراب ہوگی، وینٹی لیٹرز کی قلت پیدا ہوجائے گی۔میئر نیویارک نے اپنے بیان میں کہا کہ نیویارک میں صورتحال صحیح ہونے سے قبل بہت زیادہ خراب ہوجائے گی۔نیویارک میں اپریل مارچ سے اور مئی اپریل سے زیادہ خطرناک ہوگا،دوٹوک بتانا چاہتا ہوں کہ صورتحال بہت خراب ہوگی۔نیویارک میں 8 ہزار کورونا کے تصدیق شدہ کیسز اور 60 ہلاکتیں ہوچکی ہیں۔میئر نیویارک بل ڈی بلیسیو نے کہا کہ 10 دن بعد نیویارک میں ضروری ادویات یا وینٹی لیٹرز کی شدید قلت ہوگی۔

اشد ضروری مریضوں کو وینٹی لیٹرز نہ ملے تو وہ لوگ مر جائیں گے جو زندہ رہ سکتے ہوں گے۔ دوسری جانب دیکھا جائے تودنیا بھر میں تقریباایک بلین لوگ کورونا وائرس کے باعث گھروں میں رہنے پر مجبور ہیں، اور 13ہزار افراد موت کے منہ میں چلے گئے ہیں۔جبکہ یورپ کے زیادہ ترآبادی اموات کی طرف جارہی ہے، اسی طرح اٹلی میں صرف ایک روز میں800اموات کورونا وائرس کے باعث ہوئی ہیں۔ متحدہ امارات میں ہفتے کو 13نئے کیسز رپورٹ ہوئے اسی طرح دنیا بھر میں 3لاکھ کورونا وائرس سے متاثرہ افراد میں 92ہزار افراد صحت یاب بھی ہوگئے ہیں۔ معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ پاکستان میں اس وقت مشتبہ مریضوں کی تعداد 5650 ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں